محمود غزنوی کے پاس ایک شخص ایک چکور لایا تو محمود غزنوی نے اس سے اس چکور کی قیمت پوچھی تو اس نے قیمت بہت زیادہ بتائی تو محمود غزنوی نے اس شخص سے پوچھا کہ اس چکور کی ایک ٹانگ بھی نہیں ھے اور تم اس کی قیمت زیادہ بتا رھے ھو تو اس شخص نے کہا کہ اس کی قیمت اس لئے زیادہ ھے کہ جب میں شکار پر جاتا ھوں تو اس چکور کو ساتھ لے جاتا ھوں اور اس کو جال کے ساتھ باندھ دیتا ھوں اور یہ عجیب عجیب آوازیں نکالتا ھے اور اسکی آواز پر
دوسرے چکورجمع ھو جاتے ھیں اور میں انکا شکار کرتا ھوں
تو محمود غزنوی نے اس شخص کو مانگی ھوئی قیمت ادا کرکے
اس چکور کو ذبح کر دیا اس شخص نے محمود غزنوی سے پوچھا کہ اتنی قیمت ادا کرکے آپ نے اس چکور کو ذبح کر دیا
تو محمود غزنوی نے تاریخی جملہ کہا جو بھی کوئی دوسروں کی دلالی کے لئے اپنوں کو نقصان پہنچائے ان کا یہی حشر ھونا چاھئے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.