‎کوروناوائرس ٹیسٹ کٹس کا عجیب و غریب واقعہ تنزانیہ میں پیش آیا ۔ الجزیرہ نیوز نے خبر دی ہے کہ اچانک 22 سے کیسس 480 تک پہنچ گئیے

تو کیمسٹری کی ڈگری رکھنے والے ملک کے صدر جان مغوفولی کو شک گزرا کہ کچھ گڑبڑ ہے۔ انہوں نے ایک عجیب و غریب تجربہ کیا۔

‎انہوں نے ایک بھیڑ، بکری اور پپیتہ ، بٹیر سے لئے گئے نمونے ٹیسٹ کے لئے ملک کی مرکزی لیبارٹری بھجوائے۔ بھجوائے گئے نمونوں کو انسانی نام اور مختلف عمریں دی گئیں۔

‎حیران کن طور پر دو جانوروں بکری اور بھیڑ اور ایک پھل پپیتہ کا رزلٹ مثبت ایا۔ اس کے بعد انہوں بیرون ممالک سے درآمد کردہ تمام ٹیسٹنگ کٹس فوج کی تحویل میں دے دیئے ہیں اور انکوائری آرڈر کر دی ہے۔ تنزانیہ کے صدر کا کہنا ہے کہ ضرور کوئی “بڑی گڑبڑ” ہے۔

‎واقعہ کے بعد بین الاقوامی اداروں اور اپوزیشن کی جانب سے تنزانیہ کے صدر کے اس فعل کی مذمت کی جارہی ہے۔

اب یہ ایک نیا پنڈورا باکس کھل گیا ہے۔۔۔ اب مسلمانوں کو اس بات کا احساس ہونا چاہئے کہ سائنس و تحقیق کے میدان سے دور رہ کر ہم نے اپنا کتنا بڑا نقصان کرلیا ہے اور ہم ہر طرح سے مغرب کے محتاج بن چکے ہیں جو ناقص قسم کی ٹیسٹنگ کٹس بیچ کر مسلمانوں کو بیوقوف بنا رہے ہین۔ اب کرونا ٹیسٹنگ کٹس میں کچھ خرابی ہے یا امداد میں فری دی گئی کٹس ناقص مٹیریل سے بنائی گئی ہیں،

اس لیے وزیر اعظم پاکستان سےدرخواست ہے کہ کرونا وائرس ٹیسٹنگ کٹس کو بھی چیک ضرور کروایں ورنہ اس سے عوام کو ناقابل تلافی نقصان ہو گا۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.